PARC

زرعی روابط پروگرام (ALP)

تعارف

پاکستان اور ریاست ہائے متحدہ امریکہ کے درمیان دہائیوں پر محیط تعلقات میں سائنس و ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعا ون و اشترا ک اہمیت کے حامل رہے ہیں ۔ انہی تعلقات کا ایک مظہر زرعی روابط پروگرام (ALP)کا معا ہدہ بھی ہے ۔ ایگر یکللچرل لنکیچ(اے ایل پی) پروگرام فروری ،1999ء میں قائم ہوا۔اس معاہدہ کے تحت ، پاکستان کو دی جانے والی امریکی گندم کی فروخت سے حا صل شدہ1.3ارب روپے سے ایک ایگریکلچرل ریسرچ اینڈومنٹ فنڈ قائم کیا گیا ہے۔اس رقم کو سرمایہ کاری میں استعمال کرتے ہوئے اس سےحاصل ہونے والےمنافع سے مختلف زرعی تحقیقی و تر قیاتی منصوبوں کے لیے مالی و ٹیکنیکی معاونت فراہم کی جاتی ہے ۔
اے ایل پی ایک خو د مختا ر ادارے کے طور پر کام کر تا ہے۔ اے ایل پی فنڈ کے انتظام و انصرام بشمول مو صولہ تجاویز میں سے قابل ِ عمل اور درکار منصوبوں کا انتخاب ، پراسیسنگ ،منظوری ،عملدرآمد کی نگرانی اور رابطہ کاری مجموعی طور پر پاکستان زرعی تحقیقاتی کونسل کی ذمہ داری ہے۔
اے ایل پی فنڈ زرعی تحقیق و تر قی سے متعلق ایسے سرکاری یا پرائیویٹ اداروں اور افراد کی تجاویز /درخواستوں کو مالی معاونت کے لیے منظور کرتاہے جو ان منصوبوں پر عملد رآمد کے لیے درکار ضروری استعداد کے حامل ہو ں۔تمام تجاویز ضروری جائزوں اور دفتری کاروائیوں کی تکمیل کے بعد فنڈ کے بورڈ آ ف ڈائر یکٹر ز کو پیش کی جاتی ہیں جو تمام پہلووں پر غور وخوض کے بعد تجاویز کی منظوری یا عدم منظوری کا فیصلہ کر تا ہے۔

اے ایل پی کی مالی مدد سےیکم جولائی2017ءتک مکمل ہونے والے منصوبہ جات کی تفصیل بلحاظ ریجن /سیکٹر

تعداد

حوانیات

نباتات

قدرتی وسائل

سماجی علوم

سیکٹر / ریجن

93

20

44

23

6

وفاقی علاقہ جات / پی اے آر سی

46

8

11

17

10

پی اے; آر سی بیرونی دفاتر ومراکز

94

35

35

15

9

پنجاب

28

11

11

3

3

;سندھ

48

11

22

12

3

خیبر پختونخوا

16

6

6

3

1

بلوچستان

02

2

0

0

0

گلگت بلتستان

02

0

1

1

0

فاٹا

38

2

27

9

0

دیگر وفاقی علاقہ جات

03

2

0

1

0

آزاد جمو ں و کشمیر

04

1

1

0

2

دیگر/غیر سرکار ی تنظیمیں

374

98

158

84

34

کل تعداد