PARC
اہم کامیابیاں

مرکز 09-مسور کی ایک امید افزا قسم

مرکز09 ورائٹی کی خوبصورت فصل

مرکز 09 فصل پختگی کے مرحلے میں

چیلنج :

  • گزشتہ پچاس برس کے دوران ملک میں مسور کی جاری شدہ تمام اقسام کم پیداواررہی تھیں
  • کسی بھی قسم میں دو اہم بیماریوں پھپھوندی اور ۔۔۔ کے خلاف مدافعت نہیں تھی اور نہ ہی یہ اقسام خشک سالی برداشت کر سکتی تھیں
  • ملک اپنی ضروریات کا 50فیصد درآمد کر نے پر مجبور تھا
  • ان حالات کا تقاضا تھا کہ ایک ایسی قسم تیار کی جائے جو بیماریوں کے خلاف مدافعت ، موسمی حالات خشک سالی وغیرہ میں مطابقت رکھنے کے ساتھ ساتھ زیادہ حیاتین کی حامل ہواور خوش ذائقہ بھی ہو

اقدامات :

  • مسور کی قسم کی آئی ڈیو ٹائپ کی تیاری پر تحقیق کا آغاز 2000ء میں کیا گیا اورپیرنٹل لائن امریکہ اور کینیڈا سے حاصل کی گئیں
  • ان کو کراسنگ سے پہلے جانچا گیا اور شٹل بریڈنگ اور دیگر جدید اپروچز کو استعمال میں لاتے ہوئے نئی ورائٹی کی تیاری کے دورانیہ کو کم کیا گیا
  • ابتدائی طور پر اپنی مقداری اور اضافی خواص کے لیے جانچکاری کی گئی
  • بیجوں کی یکجائی کے بعد مواد کو وسیع مطابقت کاحامل بنانے کے لیے مختلف زرعی ماحولیات علاقوں میں کئی مقامات پر کاشت کیا گیا اور اس طرح صرف 9سال کے عرصہ میں نئی قسم تیاری کر لی گئی جو اجرا ء کے لیے تیار تھی

نتائج :

  • این اےآرسی کی مسور کی قسم مرکز 09 تمام مطلوبہ خواص کے ساتھ 2009 میں تیار کرکے بارانی اور نہری دونوں علاقوں کے لیے جاری کردی گئی
  • مسور کی یہ قسم اس وقت تقریباً 6000ہیکٹر رقبہ بالخصوص پوٹھوہار میں کاشت کی جارہی ہے
  • یہ ورائٹی تقریباً 3.2ٹن فی ہکٹر پیداواری صلاحیت کے امکانات کی حامل ہے
  • اس کی اوسط پیداوار 1.8ٹن فی ہیکٹر ہے جو گزشتہ مروجہ اقسام مسور 93اور نیاب مسور 06 کے مقابلہ میں 135 فیصد زائد ہے
  • مسور کی یہ قسم پکنے اور گلنے میں بھی 5 سے 10فیصد کم وقت لیتی ہے

مستقبل :

  • بیج کی پیداوار کا باقاعدہ معاہداتی نظام جس کے مستند اور معیاری بیجوں کی کاشتکاری تک ترسیل یقینی بنائی جا سکے
  • مزید مطلوبہ اور حسب منشاء خصوصیات کے ساتھ ساتھ زیادہ سے زیادہ پیداواری صلاحیت کی حامل نئی اقسام کی تیاری اور تعارف