PARC
اہم کامیابیاں

پی اےآر سی پلاسٹک ٹنل کے استعمال سے غیر موسمی سبزیوں کی پیداوار کا فروغ

چیلنج:

  • موسم سرما کے اواخر سے اوائل گرمیوں کے آغاز تک سبزیوں کی قلت کے باعث ان کی قیمت میں اضافہ
  • موسم گرما میں پیداوار کی زیادتی کے باعث قیمتوں میں جمود،نتیجتاًکاشتکاروں کی آمدنی میں کمی
  • کسانوں کو ایک محفوظ اور موثر کاشت ٹیکنالوجی کی فراہمی تاکہ ایک طرف بازار میں سبزیوں کی مناسب قیمتوں پر اس مو سم میں رسد ممکن ہو سکے اور دوسری جانب کاشتکاروں کی آمدنی میں بھی خاطر خواہ اضافہ ہو

اقدامات :

  • 1986ء میں کونسل نے اطالوی ، ولندیزی اور ترک مشاورت کاروں کی رہنمائی میں غیر رسمی سبزیوں کی کاشت کی ٹیکنالوجی پر تحقیق کا آغاز کیا
  • 1988ء میں زرعی ترقیاتی بینک پاکستان نے این اےآرسی میں ٹنل کی تنصیب کے لیے مالی معاونت کی
  • 1988تا 92ءکے دوران کونسل نے فصلوں (ٹماٹر ، کھیر ا ، اور شملہ مرچ)کی دوغلی اقسام بانس اور ہائپ وغیرہ سے بنائی گئی پلاسٹک ٹنل میں جانچکاری کی گئی
  • ٹماٹر کھیرا اور شملہ مرچ کی غیر موسمی کاشت کی ٹیکنالوجی کے استعمال کے باقاعدہ طریق کار وضع کرنے کےلیے مختلف تجربات کئے گئے

نتائج :

  • ٹماٹر ،شملہ مرچ اور کھیرا کی دوغلی اقسام کی کار کردگی کے بارے میں معلومات بیج برآمدکنندگان کو فراہم کی گئیں
  • سبزیوں کی غیر موسمی کاشت کے حوالے سے 50سے زائد تربیتی پروگراموں کے ذریعہ 1500 ماہر کاشتکاروں کی ٹیم بنائی گئی
  • 1992تا99 کے دوران ملک بھر میں دو ترقیاتی منصوبوں کے تحت اس ٹیکنالوجی کا ان فارم میں مظاہرہ کیا گیا
  • پی اےآرسی کی کوششوں کے نتیجہ میں پنجاب اور خیبر پختونخواہ میں 45ہزار ہیکٹر سے زائد اراضی پر اس ٹیکنالوجی کو اختیار کیا گیا

مستقبل :

  • غیر رسمی سبزیوں کی کاشت کو مقبول عام بنانے کے لیے دئیے گئے اخراجات میں کمی
  • مقامی دوغلی اقسام کی تیاری میں تیزی لائے جائے
  • بہتر کاشتی طریق کار کے ذریعہ بیماریوں میں کمی
Tunnel Structure

Tomato crop under Plastic tunnel
Cucumber crop under Plastic tunnel
Contributor